The Latest

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین کے سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ ) نے کہا ہے کہ دہشت گردوں سے مذاکرات کی بجائے ان سے جنگ کا اعلان کیا جائے اور جو ہتھیار پھینک دیں ان کے خلاف نرم رویہ اختیار کیا جائے، پاکستان میں اہل تشیع کی نسل کشی کی جا رہی ہے لہٰذا ہمیں شامل کیئے بغیر دہشت گردی کے خلاف کوئی بھی پالیسی کامیاب نہیں ہو گی،مولانا فضل الرحمن،سید منور حسن اور دیوبند کے علماء دہشت گردوں سے نفرت کا عملی اظہار کریں،اس وقت ملک کی سالمیت داو پر لگی ہے،عوام اور ملک کو تحفظ دینے والے ادارے ناکام ہو چکے ہیں، مسجدوں اور دینی اداروں کو غیر ملکی امداد بند ہونی چاہیئے،8ستمبر کو شہید عارف حسین الحسینی کی برسی کی مناسبت سے دفاع وطن کے حوالے سے کانفرنس کا انعقاد کریں گے جبکہ بان کی مون پاکستان کی بجائے امریکہ میں ڈرون حملوں کی مذمت کریں۔

 

علامہ اقبال احمد رضوی اور نثار فیضی کے ہمراہ مرکزی سیکریٹریٹ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ ) نے کہا کہ14اگست کا دن پاکستان کے وجود میں آنے کا دن ہے اس ملک کو حاصل کرنے میں ہمارے آباو اجداد کا خون بھی شامل ہے،یہ ملک اس لیئے حاصل کیا تھا تاکہ یہاں پہ لوگ امن ،سکون اور بھائی چارے سے زندگی گذار سکیں نیز تمام لوگوں کو ترقی کے یکساں مواقع میسر آ سکیں،لوگوں کو ان کے حقوق دیئے جائیں ،معاشرے میں تفرقہ پیدا نہ ہونے دیں اور دہشت گردی اور خوف و ہراس پیدا نہ ہونے دیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان بننے کے بعد حکمرانوں اور ریاستی اداروں نے اپنی ذمہ دارایاں سر انجام نہیں دیں جس کی وجہ سے ہمارا آدھا پاکستان ہم سے جدا ہو گیا،موجودہ حالات کا اگر جائزہ لیا جائے تو سوسائٹی کو ٹکڑوں میں بانٹ دیا گیا ہے ،نفرتیں پھیلائی جا رہی ہیں،اس میں ریاستی اداروں کا ہاتھ ہے،علاقائی شناخت کو ملکی شناخت پر غالب کیا جا رہا ہے، اس وقت ملک کی سالمیت داو پر لگی ہے،عوام اور ملک کو تحفظ دینے والے ادارے ناکام ہو چکے ہیں،سرحدی خلاف ورزی اور ڈرون حملے جاری ہیں جس پر ہم خاموش ہیں،ریاستی اداروں کی کمزوری اور خیانت کی وجہ سے یہ حالات سامنے آ رہے ہیں۔



انہوں نے کہا کہ کرم ایجنسی میں دیہاتوں کو خالی کروا کے طالبان کو دوبارہ وہاں پہ آباد کیا جا رہا ہے جس سے وہاں پہ خانہ جنگی کا خدشہ ہے،دہشت گردوں کو کوئی خوف نہیں سال کے دوران فوج کے تقریباً چار ہزار جوان شہید ہو رہے ہیں،ڈی آئی خان کی جیل توڑنے پر وہاں کی صوبائی حکومت خاموش ہے،اس وقت ملک کا سب سے بڑا مسئلہ دہشت گردی ہے، دہشت گردوں سے مذاکرات کی بجائے ان سے جنگ کا اعلان کیا جائے اور جو ہتھیار پھینک دیں ان کے خلاف نرم رویہ اختیار کیا جائے، جو آئین کو نہیں مانتے ان سے مذاکرات بزدلی ہے ،وزیر داخلہ کی پریس کانفرنس کو ویلکم کرتے ہیں تاہم ان باتوں پر عملدرآمد بھی ہونا چاہیئے،پاکستان میں لشکر تیار کیئے جا رہے ہیں جو کہ شیعہ اور سنیوں کو قتل کر رہے ہیں،ہم فرقہ واریت پر یقین نہیں رکھتے،پاکستان میں اہل تشیع کی نسل کشی کی جا رہی ہے لہٰذا ہمیں شامل کیئے بغیر دہشت گردی کے خلاف کوئی بھی پالیسی کامیاب نہیں ہو گی،اس حوالے سے قانون سازی ہونی چاہیئے،اس جنگ میں عوام کو اعتماد میں لیا جائے تو یہ جنگ ہم جیت سکتے ہیں،وطن بچانے کی مہم کا بھرپور ساتھ دینگے۔اس وقت ملک کی سالمیت داو پر لگی ہے،عوام اور ملک کو تحفظ دینے والے ادارے ناکام ہو چکے ہیں، مسجدیں اور مدرسے ضرورت کے تحت بنائے جائیں،مسجدوں اور دینی اداروں کو غیر ملکی امداد بند ہونی چاہیئے،ہمیں ایران سے کوئی امداد نہیں مل رہی۔


علامہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ )نے کہا کہ مصر کی جمہوری حکومت ختم کرنے میں امریکہ کیساتھ ساتھ سعودی عرب،قطر اور متحدہ عرب امارات کی حکومتیں بھی شامل ہیں کیونکہ ان کو اپنی بادشاہت کو خطرہ ہے،شام میں بھی یہی حکومتیں سرگرم عمل ہیں۔انہوں نے کہا کہ بھارہ کہو کے واقعہ کے اصل حقائق سے عوام کو آگاہ کیا جائے،مولانا فضل الرحمن،سید منور حسن اور دیوبند کے علماء دہشت گردوں سے نفرت کا اظہار کریں،دہشت گردی کا لنک مذہب سے جوڑا جا رہا ہے،یہ کیسے مدرسے ہیں جو قاتل پیدا کر رہے ہیں ایسے لوگوں کو سزا ملنی چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ8 ستمبر کو شہید عارف حسین حسینی کی برسی کی مناسبت سے اسلام آباد میں دفاع وطن کے حوالے سے کانفرنس کا انعقاد کریں گے، انہوں نے کہا کہ ضمنی انتخابات میں لوکل سطح پر مختلف امیدواروں کی سپورٹ کرینگے تاہم بلدیاتی انتخابات میں بھرپور شرکت کرینگے۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ امریکہ کا ذیلی ادارہ بن چکا ہے، بان کی مون پاکستان کی بجائے امریکہ میں ڈرون حملوں کی مذمت کریں۔

وحدت نیوز (پاراچنار) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری نے پارا چنار کا اہم دورہ کیا اور وہاں گذشتہ ماہ ہونے والے بم دھماکوں کے زخمیوں اور شہداء کے خانوادوں سے ملاقاتیں کیں۔  علامہ ناصر عباس جعفری نے اپنے دورہ پارا چنار کے موقع پر وفد کے ہمراہ پارا چنار کی مختلف تنظیموں کے رہنماوں، علمائے کرام اور سیاسی و قبائلی شخصیات کیساتھ بھی اہم ملاقاتیں کیں۔ اور مختلف امور زیر بحث آئے۔ علامہ راجہ ناصر عباس نے سابق سینیٹر اور بزرگ عالم دین علامہ سید عابد حسین الحسینی، پروفیسر ڈاکٹر سید محمد سلطان، جامعہ جعفریہ میں مرکزی انجمن کے سیکرٹری جنرل اور اراکین سے ملاقات کی۔ اس کے علاوہ مرکزی امام بارگاہ اور جامعہ مسجد کے پیش امام علامہ شیخ نواز عرفانی، علامہ علی حسین الحسینی، مجلس علماء اہل بیت (ع) کے علماء سمیت تحریک حسینی کے مسؤلین سے بھی ملاقاتیں کیں۔ مجلس وحدت مسلمین کے وفد نے قبائلی عمائدین، مشران، ائیر مارشل ریٹارڈ قیصر حسین، امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے مسؤلین اور اقبال حسین میاں سے بھی ملاقات کی۔ اس کے علاوہ علامہ ناصر عباس جعفری نے شہید قائد علامہ سید عارف حسین الحسینی رہ کے مزار پر بھی حاضری دی اور ان کے افکار کے مطابق ایم ڈبلیو ایم کی پالیسیوں کو جاری رکھنے کا عزم کیا۔


 
اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید ناصر عباس شیرازی، مرکزی سیکرٹری تربیت علامہ سید احمد اقبال رضوی، مرکزی سیکرٹری بین الصوبائی روابط علامہ اقبال بہشتی، خیبر پختونخوا کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل اور ترجمان علامہ سید عبدالحسین الحسینی، صوبائی آفس مسٔول ارشاد حسین بنگش، ضلع ہنگو کے سیکرٹری جنرل علامہ ارشاد علی اور ضلع کوہاٹ کے سیکرٹری جنرل حاجی علی داد خان بھی علامہ راجہ ناصر عباس کے ہمراہ تھے۔ ان ملاقاتوں کے دوران پارا چنار کی صورتحال سمیت ملک بھر میں جاری اہل تشیع کے قتل عام، گزشتہ عام انتخابات کے موقع پر پارا چنار میں پیدا ہونے والی کشیدگی، سیاسی صورتحال سمیت دیگر امور پر بات چیت کی گئی۔ پارا چنار سے تعلق رکھنے والی ان مذہبی و سیاسی شخصیات نے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی سربراہی میں آنے والے مجلس وحدت مسلمین کے وفد کا خیر مقدم کیا اور اسے انتہائی نیک شگون قرار دیا۔

 

اس موقع پر علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا کہنا تھا کہ پارا چنار شہداء کی سرزمین ہے، اس سرزمین نے شہید قائد علامہ سید عارف حسین الحسینی جیسے عظیم سپوت کو جنم دیا، اور اس سرزمین نے شہید جیسا عظیم رہبر قوم کو عطاء کیا۔ انہوں نے کہا کہ 4 سالہ محاصرہ کے دوران پارا چنار کے مومنین نے جو جذبہ، استقامت اور شجاعت دکھائی وہ مثالی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دشمن ہمیشہ ہمارے باہمی اختلافات کا فائدہ اٹھانے کی کوشش میں رہتا ہے، ہم آپس کے چھوٹے موٹے اختلافات میں نہیں الجھیں گے تو دشمن کو ہم پر وار کرنے کا بھی موقع نہیں ملے گا۔ انہوں نے کہا کہ پارا چنار سے کراچی اور گلگت سے کوئٹہ تک بے گناہ اہل تشیع کا خون بہایا جارہا ہے، لیکن ہم نہ کبھی شہادتوں سے خوفزدہ ہوئے ہیں اور نہ ہی ہوں گے۔

وحدت نیوز(نواب شاہ) کراچی میں اسماعیلی برادری پر دہشت گردوں کی جانب سے کریکر حملے ملک کی سالمیت پر حملہ ہیں ، ہم اس کی پرزور مذمت کر تے ہیں ، دہشت گردوں نے جشن آزادی کے موقع پر دہشت گردانہ کاروائی سے ثابت کردیا کے ان کے دل میں اس وطن اور اس کے عوام کے لئے ذرہ برابر بھی ہمدردی نہیں ، پاکستان اس وقت تاریخ کے ناذک ترین دور سے گزر رہا ہے ، پاکستان کو اندرونی اور بیرونی دونوں محاذوں پر جنگ کا سامنا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ کے سیکریٹری جنرل علامہ مختار احمد امامی نے اپنے مذمتی بیان میں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ جب کے پوری ملک محب وطن عوام جشن آزادی کی خوشیوں میں مگن ہیں ، ملک دشمن عناصر اپنی پاکستان دشمنی میں مصروف ہیں ،کوئی بھی مسلک کوئی بھی مکتب پاکستان میں دہشت گردی سے محفوظ نہیں ہے۔کوئی ادارہ اپنی ذمہ داری ادا کرنے کو تیار نہیں ، غرض یہ کہ سکیورٹی اداروں پر حملے ہو رہے ہیں ، اور حکمرانوں نے کبوتروں کی طرح آنکھیں بند کی ہوئی ہیں ۔ پاکستان اس وقت تاریخ کے ناذک ترین دور سے گزر رہا ہے ، پاکستان کو اندرونی اور بیرونی دونوں محاذوں پر جنگ کا سامنا ہے، پاکستان کی داخلی سکیورٹی کی صورتحال سے فائدہ اٹھا کر ہمارا پڑوسی ملک بھارت ہمیں آنکھیں دکھا رہا ہے ،ایل او سی پرگذشہ کئی روز سے جاری بھارتی جارحیت ہمارے اندرونی سکیورٹی خامیوں کا نتیجہ ہیں ۔

ان کا کہنا تھا کہ اب وقت کم ہے فوجی اور سول لیڈر شپ کو پاکستان کے استحکام کے لئے ٹھوس اور موثر حکمت عملی وضح کرنی ہو گی ورنہ اس ملک میں جلد دہشت گردوں کا عملی راج ہو گا ، انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت تمام مکاتب فکر کے شہریو ں کی جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنائے ، اور دہشت گردوں کو نشان عبرت بنا کرمثال قائم کرے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل و سیکرٹری امور خارجہ نے بارہ کہو خودکش حملے کی تحقیقات ہونے والی اب تک کی پیش رفت کو حوصلہ افزاء قراردیتے ہوئے کہا اصل کامیابی اس وقت ہوگی جب اس واقعے میں ملوث مجرم دہشتگردوں کو تختہ دار پر لٹکایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگردا نہ ریاست کو مانتے ہیں نہ ریاست کے آئین کو اور نہ قانون کو ایسے میں ان کے ساتھ مذاکرات انتہائی غیر منظقی بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ جودہشتگرد وطن عزیز پاکستان کو ہی قبول نہیں کرتے ان سے کس طرح کے مذاکرات ہوسکتے ہیں۔

 

علامہ شفقت شیرازی نے مزید کہا ان مذاکرات وہاں پر ممکن ہے کہ دہشتگرد ملک کے آئین اور پارلیمنٹ کو تسلیم کریں جو لوگ ملک کی اہم تنصیبات اور عوام پر شب وروز حملے کررہے ہوں جو بہ بانگ دہل یہ کہتے پھریں کہ ہم پاکستان کے آئین و قانون کو نہیں مانتے، جو گولی اور بندوق کے زور پر اپنی بات منوانا چاہتے ہیں ان سے صرف آہنی ہاتھوں سے نمٹا جاسکتا ہے۔ سیکرٹری امور خارجہ نے مزید کہا کہ دنیا بھر میں ملک کی جگ ہنسائی ہورہی ہے کہ ہم کئی دہائیوں سے اس بات پر الجھے ہوئے ہیں دہشتگردوں کو دہشتگرد کہیں یا نہ کہیں ان سے مذاکرات کریں یا مقابلہ ،انہوں نے کہا کہ ریاست کے اندر ریاست بنانے کا تصور خطرناک عمل ہے اور اس کا تجربہ ہم سوات میں کرچکے ہیں

وحدت نیوز (ملتان) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے شعبہ وحدت یوتھ ونگ کے مرکزی چیئر مین فضل عباس نقوی ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ ملک بھر میں نوجوانان ملت مادر وطن کے استحکام کی خاطر کسی بھی قسم کی قربانی دینے کے لئے آمادہ ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے وحدت یوتھ ونگ کے مرکزی دفتر میں چودہ اگست کی مناسبت سے منعقدہ جشن آزادی کی ایک خصوصی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

وحدت یوتھ ونگ کے مرکزی چیئر مین سید فضل عباس کاکہنا تھا کہ مملکت خداداد پاکستان آج دشمن امریکہ اور اسرائیل کے صیہونی شکنجوں میں ہے تاہم مملکت خداداد پاکستان کو صیہونی شکنجے سے فقط پاکستان کے نوجوان ہی نجات دلوا سکتے ہیں ۔

وحدت یوتھ ونگ کے مرکزی رہنما کاکہنا تھا کہ محبت رسول اکرم  صلی اللہ علیہ والہ وسلم اور اہل بیت علیہم السلام سے سرشار ملت کے جوان خداداد صلاحیتوں سے مالا مال ہیں اور اب وقت آ گیا ہے کہ ملت کے جوان اپنی تمام تر جیحات کا مرکز مادر وطن کے استحکام کے لئے صرف کر دیں۔

ان کاکہنا تھا کہ اسلام اور پاکستان کا دشمن امریکہ اور اس کی ناجائز اولاد اسرائیل پاکستان کو غیر مستحکم کر کے پاکستان کی ایٹمی صلاحیت کو یرغمال بنانا چاہتے ہیں جبکہ دشمن یہ چاہتا ہے کہ ایک طرف مشرق وسطی میں عظیم اسرائیل کے منصوبے کو عملی جامہ پہناکر دنیا کی معیشت کی شہ رگ پر قبضہ کرے اور دوسری جانب پاکستان میں اپنی جڑیں مضبوط کر کے جنوبی ایشیاء سمیت وسطی ایشائی ممالک میں موجود قدرتی ذخائر کو بھی ہڑپ کر جائے۔


انہوں نے کہا کہ ملک کے جوان طبقے کو چاہئیے کہ مادر وطن کے استحکام اور بقاء کی خاطر ملک دشمن اور اسلام دشمن قوتوں کے ناپاک عزائم کو خاک میں ملا دیں اور پاکستان کے ۶۶ویں یوم آزادی کے موقع پر تجدید عہد کریں کہ ملک دشمن قوتوں کے ناپاک عزائم کو خاک میں ملا کر رکھ دیں گے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد)  مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری(حفظ اللہ)  نے کہا ہے کہ ایل او سی پر ہونے والے حالیہ واقعات تشویشناک ہیں، امریکہ بھارت کو خطے میں تھانیدار بنانا چاہتا ہے، حکومت کو دوستوں اور دشمنوں میں تمیز کرنا ہوگی۔ بھارت سے آلو، ٹماٹر اور اب بجلی کے خریدار بتائیں کہ 65 برسوں سے کتنی سفارت کاری کام آئی ہے، مذاکرات اچھی بات ہے لیکن یک طرفہ ٹریفک قوم کی توہین ہے۔ تاریخ گواہ ہے کہ بھارت نے کبھی بھی پاکستان کیخلاف کوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیا، اندرونی صورتحال سے فائدہ اٹھانے والی قوتیں دراصل پاکستان کو تنہا کرنے کے درپے ہیں، امریکی ایماء پر پاکستان کو سینڈویج بنانے کی شازشیں کی جا رہی ہیں، لہٰذا حکمرانوں اور ریاستی اسٹیک ہولڈرز کو ہوش کے ناخن لینا ہونگے، پاکستان کے فقط دو ہی خیرخواہ ملک ہیں جن کی سرحدیں ہمیشہ سے پاکستان کے خلاف استعمال نہیں ہوئیں اور انہوں نے ہمیشہ مشکل اور کڑے وقت میں پاکستان کا ساتھ دیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ امریکہ اور اس کے حواری گوادر منصوبے اور پاک ایران گیس پائپ لائن کی مخالفت کرتے ہیں، کیونکہ انہیں معلوم ہے کہ ان منصوبوں سے پاکستان کی ترقی اور زندگی وابسطہ ہے، ان قوتوں کی خواہش ہے کہ پاکستان کو مکمل طور پر تنہا کر دیا جائے۔

علامہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ)نے کہا کہ فوج کو پاک بھارت سرحد کی صورتحال سے زیادہ اس وقت ملک کی اندرونی صورتحال پر توجہ دینا ہوگی، اگر ہم اندر سے کمزور ہوگئے تو دشمن کیلئے حملہ کرنا کوئی مشکل کام نہیں رہے گا، بھارت پاکستان پر حملے کی جرات نہیں کرسکتا کیونکہ اسے معلوم ہے کہ پاکستان ایٹمی قوت ہے اور اس نے یہ طاقت کیوں حاصل کی ہے، انڈیا بخوبی جانتا ہے۔

علامہ ناصر عباس جعفری ( حفظ اللہ)نے کہا کہ قومی اسمبلی کا سیشن شروع ہوگیا ہے، لٰہذا قومی قیادت کو مل بیٹھ کر فی الفور دہشتگردی کیخلاف فیصلے کرنا ہوگا، دہشتگردی ملک کو دیمک کی طرح چاٹ رہی ہے اور ملک اندر سے دن بدن کمزور ہوتا جا رہا ہے۔ نواز حکومت کو مذاکرات کا ڈرامہ چھوڑ کر ملک دشمن عناصر کیخلاف فیصلہ کن آپریشن کرنا ہوگا۔

وحدت نیوز (کوہاٹ)  بہارہ کہو واقعہ میں شہید ہونے والے محافظ امین حسین شیرازی کے والد بزرگوار نے کہا کہ امین حسین کی شہادت پر پوری ملت کو مبارکباد پیش کرتا ہوں، اپنے باقی تین بیٹے بھی راہ حق پر قربان کرنے کو تیار ہوں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے شہید کی رسم سوئم کے موقع پر منعقدہ محفل سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ میرے اب تین بیٹے باقی ہیں، اگر ملت کو ضرورت پڑی تو میں یہ تینوں بیٹے بھی قربان کرنے کو تیار ہوں، ہم شہادت سے کسی طور پر بھی خوفزدہ نہیں ہوتے کیونکہ ہم راہ حق پر ہیں اور اسی راستے پر قائم رہیں گے۔

 انہوں نے کہا کہ ہم امام زمانہ (عج) کے لشکر میں شامل ہونا چاہتے ہیں اور قربانی دیکر ہی ہم کامیابی حاصل کرسکتے ہیں۔ انہوں نے ملت کو شہید امین حسین شیرزای کی شہادت پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ میں ان تمام مومنین اور علمائے کرام کا شکر گزار ہوں جنہوں نے ہمیں حوصلہ دیا اور شہید کے جسد خاکی کو عزت و توقیر کیساتھ یہاں پہنچایا۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) تمام اہل وطن کو مملکت خدا داد پاکستان کے 67ویں جشن آزادی پر مبارک باد پیش کر تا ہوں ، تمام محب وطن پاکستانیو ں کو اس یوم آزادی پر پاکستان کی بقاء، سلامتی اور خوشحالی کے لئے تجدید عہد اور اس کے دشمنوں سے جنگ کا عزم کر نا ہو گا ، مفکر پاکستان حضرت علامہ اقبال (رح)نے جس آزاد وطن کا خواب دیکھا تھا اور بانی پاکستان حضرت قائد اعظم محمد علی جناح (ر ح) نے جو آزاد وطن ہمارے پاس امانت کے طور پر چھوڑا تھا ، آج وہ آزادوطن دہشت گردی ، لا قانونیت، کرپشن اور طرح طرح کی بیماریوں کاشکار ہوچکا ہے ، افسوس کے اس وطن کے با اختیار ادارے بھی اب اس کے ساتھ با وفائی نہیں کر رہے، مفکر پاکستا ن اور بانی پاکستان کی ارواح اس وطن کی حالت زار پر نوحہ کناں ہو ں گئی۔ ان خیالات کااظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے پاکستان کے 67ویں یوم آزادی کے موقع پر وحدت ہاؤس اسلام آباد سے جاری اپنے تہنیتی پیغام میں کیا ۔

ان کا کہنا تھا کہ یوم آزادی پاکستان ایک مرتبہ پھر اہل وطن سے اس عزم کا اعادہ چاہتا ہے جو اس نے 67برس قبل تحریک آزادی کے دوران کیا تھا ،اس وطن کے باسی برطانیہ سامراج کی غلامی سے آزادی پا کر امریکہ سامراج کی غلامی میں چلے گئے ہیں ، کیا بانیان پاکستان نے ہزاروں جانوں کی قربانیوں کے بعد یہ آزاد وطن امریکہ کی غلامی میں دینے کے لئے حاصل کیا تھا ، ہرگز نہیں ، یہ ہمارے خائن اور مفاد پرست سیاستدانوں کی ناقص داخلہ اور خارجہ پالیسیوں کا نتیجہ ہے ، جس کا خمیازہ آج پاکستان کے 18کڑوڑ محب وطن عوام بھگت رہے ہیں ۔

ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی اور قتل وغارت گری اس ملک کا مقدر بنادی گئی ،کرپشن اس ملک کو دیمک کی طرح چاٹ رہی ہے ، انصاف اس ملک میں چراغ لے کر ڈھونڈنے سے نہیں ملتا ، روزانہ مساجد، امام بارگاہوں ، درباروں بازاروں اورچوراہوں پر بیگناہوں کے خون سے ہولی کھیلی جاتی ہے ، اب تو حد ہی ہو گئی روز روز دسیوں فوجی جوان اس ملک کے اندر موجود دہشت گردوں کی بربریت کا نشانہ بن رہے ہیں لیکن افسوس کہ ہمارے جرنیل اپنے محلات میں پر سکون نیند سو رہے ہیں ۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کو دہشت گردوں کی چنگل سے آزاد کر وانے کے لئے اس یوم آزادی پر تمام محب وطن شیعہ ، سنی، ہندو، سکھ اور عیسائیوں کو یہ شہدائے تحریک پاکستان اور بانیان پاکستان کی ارواح سے عہد کرنا ہو گا کہ دہشت گردی کے خلاف عملی اور اجتماعی جدوجہد کا آغاز کر نا ہے ، یہ وطن خداوند متعال کی ایک نعمت برصغیر کے مسلمانوں کے لئے تھا اوررہے گا ۔مایوسی اورناکامی انشاء اللہ اس وطن کے دشمنوں کا مقدر بنے گی۔

لائن آف کنٹرول کے پاکستانی علاقوں پر جاری بھارتی فوجی جارحیت کی مذمت کرتے ہو ئے ان کا کہنا تھا کہ ہندستان اپنی آنکھوں کا میل صاف کر لے ، اس پاک وطن کی مٹی سے عہد وفا نبھانے والے ابھی زندہ ہیں ، وہ چند ہیں جو اس کی عصمت کے درپے ہیں اور وہ بھی تم میں سے ہی ہیں ، ہمارے وطن کی مٹی گواہ ہے کہ اس مادر وطن کے باوفا بیٹوں نے کبھی اس ملک کے دشمنوں کے ساتھ ساز باز نہیں کی اور ہمیشہ اس کے دفاع کی فرنٹ لائن پر موجود رہے ہیں ۔اگر بھارتی جارحیت حد سے بڑھی تو اس وطن کا بچہ بچہ اس کے ذرے ذرے پر قربان ہونے کے لئے امادہ وتیار ہو گا ۔

وحدت نیوز (سکھر) ہندوستانی وزیر دفاع کا جارحانہ بیان اور بھارتی فوج کی جانب سے لائن آف کنٹرول پر پاکستانی علاقوں پر فائرنگ پر زور مذمت کر تے ہیں ۔دشمن ہوش کے ناخن لے پاکستانی فوج اور عوام سرزمین وطن کے انچ انچ کا دفاع کر نیکی صلاحیت رکھتی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان ضلع سکھر کے سیکریٹری جنرل چوہدری اظہر حسین نے وحدت ہاؤس سکھر سے جاری اپنے مذمتی بیان میں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ گذشتہ کئی روز سے بھارتی فوج پاکستانی سرحدوں کی مسلسل خلاف روزی میں مصروف ہے ، اقوام متحدہ اور بین الاقوامی ادارے خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہے ہیں،لائن آف کنٹرول پر مختلف سیکٹررز میں فائرنگ کا سلسلہ بدستور جاری ہے ، جب کہ 2بیگناہ شہری اب تک شہید ہو چکے ہیں ، بھاری اسلحے کا استعمال معمول بن چکا ہے ۔

ان کا مذید کہنا تھا کہ بھارتی فوج پاکستانی غیور عوام کے صبر کو نہ آزمائے ، ہم اپنی مادر وطن کے ایک ایک انچ کا دفاع کر نے کی صلاحیت رکھتے ہیں اگر بھارتی افواج نے پاکستان کے خلاف جارحانہ وریہ ترک نہ کیاتو ہم اپنے وطن کے دفاع کی خاطر کسی بھی قربانی سے گریز نہیں کریں گے ۔ 

وحدت نیوز (حیدر آباد) کالعدم دہشت گرد گروہ کی فائرنگ سے شہید ہو نے والے نارا جیل کے اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ آغا ندیم عباس غوری کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی ، نمازہ جنازہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان ضلع حیدرآباد کے سیکریٹری جنرل علامہ امداد علی نسیمی کی زیر اقتداء ادا کر دی گئی ، نماز جنازہ میں ایم ڈبلیو ایم کے رہنماء عالم کربلائی ، یعقوب حسینی ، ندیم جعفری اور دیگر بھی موجود تھے ۔جب کہ کثیر تعداد میں اہل سنت برادری بھی نماز جنازہ میں شریک تھی ، اس موقع پر انتہائی رقت آمیز مناظر دیکھنے میں آئے ہر آنکھ اشکبار تھی۔

واضح رہے کہ ناراجیل حیدرآباد کے اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ آغا ندیم عباس غوری کو دو روز قبل جیل سے گھر جاتے ہو ئے ٹنڈو آغا کے مقام پر امریکی و سعودی تکفیری دہشت گردوں نے گولیوں کا نشانہ بنایا تھا ۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree