The Latest

وحدت نیوز (مانیٹرنگ ڈیسک) رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے یونیورسٹیوں کے اساتذہ کے اجتماع سے خطاب میں فرمایا ہے کہ علم ذاتی فضیلت کے ساتھ سیاسی و اقتصادی اقتدار کا باعث بھی ہوتا ہے۔ یونیورسٹیوں میں علمی گفتگو اور علم و سائنس کے فروغ پر خاص توجہ مبذول کرنی چاہیے۔ ایک ایرانی خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای سے ملک بھر کی یونیورسٹیوں کے سینکڑوں اساتذہ اور علمی انجمنوں کے اراکین نے ملاقات میں یونیورسٹیوں کے مختلف علمی موضوعات کے بارے میں اپنے اپنے نظریات بیان کئے۔ اس ملاقات کے آغاز میں 9 اساتید نے ایک گھنٹہ تیس منٹ تک اپنی تجاویز اور اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا اور اس کے بعد رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے اپنے خطاب میں ملک کی برق رفتار علمی پیشرفت کے سلسلے میں پیہم اور مسلسل تلاش و کوشش اور جد وجہد پر تاکید کرتے ہوئے فرمایا کہ علمی پیشرفت و ترقی کے ذریعہ سیاسی اور اقتصادی اقتدار کی راہ ہموارہوتی ہے اور یہ امر  عالمی سطح پر ایرانیوں کی عزت و عظمت کا باعث بھی ہے اور اس ہدف تک پہنچنے کے لئے یونیورسٹیوں میں سائنسی اور علمی گفتگو، سائنسی ترقی اور پیشرفت کے بارے میں گفتگو ، ملک کی عمومی پیشرفت کے بارے میں گفتگو کی حفاظت اور تقویت بہت ضروری ہے۔

 

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے یونیورسٹیوں کے اساتید کے ساتھ اس قسم کے جلسات کے انعقاد کو سب سے پہلے یونیورسٹیوں کے اساتید اور علم کے مقام کے احترام کے سلسلے میں علامتی اقدام قراردیتے ہوئے فرمایا: ان جلسات کے انعقاد کا دوسرا مقصد ملک اور یونیورسٹیوں کے مختلف اور گوناگوں مسائل کے بارے میں اساتید محترم کے نظریات کا سننا ہے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے یونیورسٹیوں کے اساتید کے درمیان مختلف نظریات کی موجودگی کو سبق آموز اور قابل توجہ قراردیا اور ملک میں علمی و سائنسی ترقی کی جانب اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: تقریبا گذشتہ 12 سال سےملک میں علم کی پیداوار اورسائنسی ترقی اور پیشرفت کے سلسلے میں تلاش و کوشش اور جد وجہد کا آغاز ہوا ہے اور یہ حرکت متوقف نہیں ہوئي بلکہ مزید سرعت کے ساتھ آگے کی جانب رواں دواں ہے۔

 

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے اس علمی اور سائنسی حرکت کو اسلامی جمہوری نظام اور ملک کے لئے بہت ہی اہم قراردیتے ہوئے فرمایا: دنیا کے معتبر علمی مراکز نے بھی بعض منفی نظریات کے باوجود اسلامی جمہوریہ ایران کی اس علمی اور سائنسی پیشرفت کا اعتراف کیا ہے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے دنیا کے علمی مراکز کے بعض اعداد و شمار کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: عالمی اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ بارہ سال میں ایران کے علمی رتبہ میں اس سے پہلے کی نسبت 16 برابر اضافہ ہوا اور ایران میں علمی و سائنسی ترقی متوسط طور پر عالمی پیشرفت کے 13 برابرہوگئی ہے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: عالمی علمی و سائنسی مراکز کی اطلاعات کے مطابق اگر ایران کی علمی و سائنسی ترقی کا سلسلہ یوں ہی جاری رہے تو پانچ سال کے کے بعد دنیا میں ایران کا علمی رتبہ چوتھے نمبرپر پہنچ جائے گا۔

 

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے تاکید کرتے ہوئے فرمایا: اگر اس برق رفتارعلمی حرکت کے ساتھ  ملک میں یونیورسٹیوں کے فروغ اور اسی طرح یونیورسٹیوں کے اساتید اور طلباء پر توجہ مبذول کی جائے تو ہمیں انقلاب اسلامی کے بعد یونیورسٹیوں سے زیادہ سے زیادہ اورگرانقدر علمی نتائج حاصل ہوں گے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے ایرانی محققین اور ماہرین کے علمی اور سائنسی مقالات میں قابل توجہ اضافہ اور اسے ملک میں علمی ترقی و پیشرفت اور مجاہدت کا ایک شاندار مظہر قراردیتے ہوئے فرمایا: یہ تمام موارد ملک میں شاندار اور گرانقدر علمی و سائنسی ترقی کا مظہر ہیں اور اس علمی رشد و نمو کی تقویت اور حفاظت بہت ضروری ہے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے یونیورسٹیوں کے اساتید ، طلباء اور ماہرین کو مخاطب کرتے ہوئے فرمایا: ملک کی علمی اور سائنسی پیشرفت و ترقی کو روکنے کی کسی کو اجازت نہ دیں اور کسی بھی قیمت پر ملک کی علمی ترقی کو متوقف نہ ہونے دیں۔

 

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے اسلام میں علم کی ذاتی قدر و منزلت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: علمی پیشرفت کےسلسلے میں میری باربار تاکید کا مطلب یہ نہیں ہے کہ اسلام میں علم و عالم کےاحترام اورمقام کے سلسلے میں بہت زيادہ تاکید کی گئي ہے بلکہ اس کی اصل دلیل یہ ہے کہ علم، اقتدار اور قدرت عطا کرتا ہے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے علمی و سائنسی ترقی کو عالمی سطح پر ایرانیوں کی عزت و عظمت اور سیاسی و اقتصادی اقتدار کا باعث قراردیتے ہوئے فرمایا: ان تمام حقائق اور دلائل سے پتہ چلتا ہے کہ ایران کی علمی پیشرفت کسی بھی صورت میں سست اور متوقف نہیں ہونی چاہیے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے دنیا میں مختلف سیاسی گروپ بندیوں کے بارے میں ایک استاد کے نظریہ کی تائيد کرتے ہوئے فرمایا: اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف عداوت اور دشمنی پر مبنی محاذ چند مغربی ممالک نے تشکیل دے رکھا ہے اور انھوں نے ایران کی علمی پیشرفت و ترقی کو روکنے کے لئے ہر  قسم کی تلاش و کوشش جاری رکھی ہوئی ہے اورچند مغربی ممالک  ایرانی قوم اور اسلامی محاذ کے مقابلے میں صف آرا ہیں۔

 

رہبر معظم انقلاب اسلامی نےعلمی اور یونیورسٹی ڈپلومیسی سے استفادہ کے سلسلے میں یونیورسٹی کے ایک اور استاد کے بیان کو درست اور صحیح قراردیتے ہوئے فرمایا: بہر حال اس بات پر بھی توجہ رکھنی چاہیے کہ مد مقابل فریق نے بھی اپنے اہداف کو عملی جامہ پہنانے کے سلسلے میں علمی ڈپلومیسی پر سرمایہ کاری اور منصوبہ بندی کر رکھی ہے۔ رہبرمعظم انقلاب اسلامی نے علمی اقتدار کو داخلی اور اندرونی اقتدار قراردیتے ہوئے فرمایا: اس بات میں کوئي شک و شبہ نہیں ہے کہ بعض پابندیاں ایران کی علمی پیشرفت کو روکنے کے لئے عائد کی گئی ہیں تاکہ ایران علمی اقتدار کی بلندی تک نہ پہنچ پائے لہذا ہمیں ہر لحاظ سے اپنی علمی اور سائنسی ترقی و پیشرفت کو جاری رکھناچاہیے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے علمی و سائنسی پیشرفت کے سلسلے میں یونیورسٹیوں میں موجود علمی فضا کو مؤثر قراردیتے ہوئے فرمایا: یونیورسٹیوں میں علمی گفتگو، ترقی اور پیشرفت پر مشتمل گفتگو اور ملک کی عمومی پیشرفت کے بارے میں گفتگو کو فروغ دینا چاہیےتاکہ یونیورسٹیوں کے اہلکاروں کا جذبہ ملک کی عمومی پیشرفت میں مزید مضبوط ہوجائے۔

 

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے ملکی پیشرفت کی ضروریات کو پورا کرنے میں یونیورسٹیوں میں علمی خلاقیت اور نوآوری پرتاکید کرتے ہوئے فرمایا: قدرتی طور پر وسائل اور ظرفیتیں محدود ہیں لہذا علمی اقدامات اور منصوبہ بندی میں ملک کی ضروریات پر اصلی ملاک اور معیار کے عنوان سے بھر پور توجہ دینی چاہیے۔ رہبرمعظم انقلاب اسلامی نے تجارت اور صنعت کے ساتھ یونیورسٹیوں کی تحقیق کے پیوند کو مزید مضبوط بنانے پر تاکید کرتے ہوئے فرمایا:  علمی خلاقیت اور نوآوری کے سلسلے میں یونیورسٹیوں ، اعلی تعلیمی مراکز ، اساتید اور یونیورسٹیوں کے محققین اور ماہرین کے درمیان تعمیری مقابلہ ہونا چاہیے اور کامیاب یونیورسٹیوں اور کامیاب افراد کو انعامات عطا کرنے چاہییں۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے یونیورسٹیوں کے تمام اساتید،اہلکاروں اور مؤثرافراد  سے درخواست کی کہ وہ  یونیورسٹیوں میں کم اہم اور غیر ضروری مسائل کے فروغ کی اجازت نہ دیں بلکہ طلباء اور ماہرین کی توجہ ملک کے اساسی اور بنیادی مسائل کی طرف مبذول کرتے رہیں۔

 

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: ہمارے دشمن یونیورسٹیوں کے ذاتی اور یونینی مسائل کو بھی ملک کے سیاسی مسائل سے جوڑکربحران پیدا کرناچاہتے ہیں اور یونیورسٹیوں کو سیاسی احزاب اور معمولی مسائل سے متاثر نہیں ہونا چاہیے۔ رہبرمعظم انقلاب اسلامی نے اسلام اورانقلاب اسلامی کو ملک کی پیشرفت میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کا اصلی عامل قراردیتے ہوئے فرمایا: اگر انقلاب اسلامی کی کامیابی نہ ہوتی تو یقینی طور پر تسلط پسند اور سامراجی طاقتیں ایران کو خود اعتمادی اورعلمی پیشرفت کے اس درخشاں مقام تک نہ پہنچنے دیتیں۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: اس حقیقت کے پیش نظر ہمیں اسلامی اور انقلابی اقدار اور اصولوں کی پاسداری اور حفاظت کا عہد کرنا چاہیے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے یونیورسٹیوں کے کیفی ارتقاء کو بہت اہم ، ضروری اور مستقل موضوع قراردیتے ہوئے فرمایا: یونیورسٹیوں میں کمی فروغ عمدہ اور مؤثر ہے لیکن یونیورسٹیوں کے کیفی ارتقاء پر زیادہ سے زیادہ توجہ مبذول کرنی چاہیے اور کیفی فروغ پر توجہ کے ساتھ کمی فروغ پربھی توجہ دینی چاہیے۔

 

رہبرمعظم انقلاب اسلامی نے یونیورسٹی اساتید اوراہلکاروں کے اجتماع سے خطاب میں اپنے آخری نکتہ میں فارسی زبان کے بارے میں خاص توجہ اور حساسیت دکھانے کی ضرورت پر زوردیا۔ رہبرمعظم انقلاب اسلامی نے مختلف علوم کے سلسلے میں فارسی زبان کے استفادہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: دنیا میں فارسی زبان کو فروغ دینے کے سلسلے میں ملک کی علمی پیشرفت سے استفادہ کرنا چاہیے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے تحقیقات اور ریسرچ میں فارسی زبان سے استفادہ، علمی مفاہیم کے لئے اصطلاحات اور کلمات سازی کو فارسی زبان کے فروغ میں مؤثر روش قراردیتے ہوئے فرمایا: اس طرح عمل کرنا چاہیے کہ اگر کوئي آئندہ ایران کی علمی کاوشوں سے استفادہ کرنا چاہیے تو اسے فارسی سیکھنے کی ضرورت پڑے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے معاشرے کی مختلف سطحوں پر غیر ملکی کلمات کے استعمال پر تنقید کرتے ہوئے فرمایا: انقلاب سے پہلے کی بہت سے غلط  روشیں اور رسمیں ختم ہوگئی ہیں لیکن غیرملکی کلمات سے استفادہ کرنے کی غلط رسم ابھی بھی باقی ہے۔

 

رہبرمعظم انقلاب اسلامی نے اپنے خطاب کے اختتام پر علمی و سائنسی پیشرفت کے بارے میں جامع اور بلند مدت نگاہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا: پیشرفت اور ترقی سے مراد ، اسلامی – ایرانی پیشرفت کے نمونہ پر مبنی پیشرفت ہے کیونکہ مغربی پیشرفت جس کی بنیاد استثمار اور استعمار پر استوار ہے وہ اخلاقی بنیادوں پر منصفانہ معاشرے کی تشکیل اور معاشرے سے تبعیض اور برائیاں ختم کرنے میں ناکام ہوگئی ہے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: اسلامی نظام کو یقینی طور پر پیشرفت کے اسلامی ، ایرانی نمونے کا پیچھا کرنا چاہیے یعنی ایسا نمونہ جو اسلامی ہدایات پر مشتمل ہو اور اس میں ایرانی سنتوں اور روشوں سے بھراستفادہ کیا جائے۔ اس ملاقات میں رہبر معظم انقلاب اسلامی کے خطاب سے قبل یونیورسٹیوں کے 9 اساتید اور دانشوروں نے یونیورسٹیوں کے مختلف علمی مسائل کے بارے میں اپنے اپنے خیالات پیش کئے۔

وحدت نیوز (پشاور) مجلس وحدت مسلمین خیبر پختونخواہ کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید عبدالحسین الحسینی نے کہا ہے کہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں مسائل کی جڑ امریکہ اور اسرائیل ہیں، مسلمانوں میں کوئی اختلافات نہیں، ہمارا دشمن ہمیں ٹکڑوں میں تقسیم کرنے کے درپے ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور پریس کلب میں تنظیم کارواں کے زیر اہتمام ایک دن عید منانے کیلئے منعقدہ قومی عید یکجہتی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اہل تشیع اور اہل سنت نے ملکر پاکستان بنایا تھا اور ملکر ہی پاکستان بچائیں گے۔ تاہم پاکستان کو بچانے کیلئے متحد ہونے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ شیعہ، سنی ایک دوسرے سے جدا نہیں، اگر ہماری ایک آنکھ شیعہ ہے تو دوسری سنی۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں فساد کی جڑ کی امریکہ اور اسرائیل ہیں، تمام مسلمانوں میں استعماری قوتوں کی سازشوں کو سمجھنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ رویت کا مسئلہ انتہائی سنگین ہے، دنیا میں کہیں بھی دو، دو عیدیں نہیں ہوتیں۔ اس مسئلہ کو جتنا جلدی ممکن ہوسکے حل ہونا چاہئے۔ حکومت اور علمائے کرام کو ملکر اس مسئلہ کا حل ڈھونڈنا ہوگا۔

وحدت نیوز (کراچی) فقہ جعفریہ کے مطابق عیدالفطر پر فطرہ کا نصاب 150 روپے فی کس مقرر کیا گیا ہے۔ اسلام ٹائمز سے گفتگو کرتے ہوئے معروف عالم دین اور مجلس وحدت مسلمین سندھ کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید صادق رضا تقوی نے کہا کہ عیدالفطر پر فقہ جعفریہ سے تعلق رکھنے والے افراد کیلئے فطرانہ کی رقم 150 روپے فی کس ہوگی۔ انہوں نے بتایا کہ فطرہ فی کس تین کلو گندم یا  اسکے مساوی رقم ہے۔ علامہ صادق رضا تقوی کے کہنا تھا کہ فطرہ درحقیقت اللہ تعالیٰ کی طرف سے معاشرے کے مستحق، نادار، غرباء و مساکین کو اپنی خوشیوں میں شامل کرنے کیلئے ایک ایسا فریضہ ہے جو ہر مسلمان پر عائد ہوتا ہے۔ دوسری جانب فقہ حنفیہ کے مطابق عیدالفطر پر فطرانہ کی رقم 100 روپے فی کس ہوگی۔ فقہ حنفیہ کے مطابق فطرہ سوا دو کلو گندم یا اسکے مساوی رقم ہے۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کے زیر اہتمام جامع مسجد الحسین اچھرہ ماربل مارکیٹ لاہور میں اجتماعی،تربیتی،معرفتی خواتین کے لیئے اعتکاف کا اہتمام کیا گیا جس میں خواتین کی بڑی تعداد شریک ہوئی۔ دوران اعتکاف مختلف تربیتی پروگراموں کا انعقاد کیا گیا جیس میں مختلف علمائے کرام نے دروس دیئے۔ مرکزی رہنما مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ ابوذر مہدوی نے فلسفہ اعتکاف اور اسرار اعتکاف پر جامع درس دیا اور خواتین کی تربیت کو معاشرہ سازی کیلئے سنگ میل قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ رہبر انقلاب آیت اللہ روح اللہ خمینی (رح) نے ماں کی گود کو یونیورسٹی یعنی درس گاہ کا درجہ دیا کیونکہ بچے کی پہلی درس گاہ اس کی ماں کی گود ہیں بہتریں ماں ہی اعلیٰ معاشرے کی تکمیل کیلئے کردار ادا کرتی ہیں۔ معتکفین سے جامع مسجد الحسین کے خطیب علامہ حسن رضا قمی نے عبادات اور دعا کے موضوع پر درس دیتے ہوئے کہا کہ معصومین (ع) کا فرمان ہے کہ دعا مومن کا اسلحہ ہے معاشرے میں بگاڑ کی اصل وجہ مسلمانوں کا دعا و عبادات سے دوری ہیں اگر ہم غیراللہ کے بجائے رب زوالجلال کے سامنے سربسوجود ہوں تو ان تمام خرافات سے معاشرہ پاک ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں آئے دن آفات جو کبھی دہشت گردی،سیلاب،قحط ذدگی، ناگہانی اموات کا اصل سبب احکامات الہی سے دوری اور دعا و عبادات سے غافل ہونا ہے۔

 

معتکفین سے خطاب میں سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین پاکستان خواہر خانم سکینہ مہدوی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی ہمیشہ سے کوشش رہی ہیں کہ وہ ملت کی خواتین کی تربیت اور بیداری میں حالات جیسے بھی ہوں کردار ادا کریں الحمد اللہ آج پاکستان میں ملت جعفریہ کے خواتین ملی،مذہبی امور میں اپنے بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑی نظر آتی ہیں چاہے وہ ملک میں ہونے والے سانحات میں دشمن کے خلاف ہونے والے مظاہروں،دھرنوں،امدادی کاموں،یا تربیتی و تبلیغی امور ہوں ہر جگہ خواتیں صف اول کا کردار ادا کرتی رہی ہیں۔ اجتماعی اعتکاف میں نوجوان بچیوں کی بڑی تعداد شریک تھیں۔ لاہور شہر میں خواتین کی اجتماعی اعتکاف کا پہلا منظم اور پر وقار اجتماع تھا جو قابل تعریف اور قابل تقلید پروگراموں میں سے تھا۔ مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین لاہور کی سیکرٹری جنرل خواہر ہما تقوی کی بھی اس روح پرور پروگرام کی انعقاد میں گراں قدر خدمات سر انجام دیے۔

وحدت نیوز (کوئٹہ ) سابقہ حکومتوں کی ناقص منصوبہ بندیوں او ر قبضہ مافیا کی من مانیوں کی وجہ سے باران رحمت لوگوں کیلئے زحمت کا باعث بن گئی ہے۔بروری ہزارہ ٹاؤن میں سیلابی نالوں پر تجاوزات اور تعمیرات کی وجہ سے گزشتہ رات ہونے والے بارشوں کا سیلابی ریلہ لوگوں کی گھروں میں در آیا جسکی وجہ سے سیلاب کی تباہ کاریاں دوچند ہوگئیں۔ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رکن بلوچستان اسمبلی سید محمد رضا رضوی نے حالیہ سیلاب سے متاثرہ علاقوں کے رودے کے موقع پر کیا۔ان موقع پر علامہ سید ہاشم موسوی بھی ان کے ہمراہ تھے ۔

آغا رضا کا کہنا تھا کہ سیلابی پانی کیساتھ بہہ کر آنے والے روڑوں کی وجہ سے سڑکیں بند پڑی ہیں اور لوگ بے سر و سامانی کی حالت میں کھلے آسمان تلے زندگی گزرنے پر مجبور ہیں اور حکومتی امداد کی منتظر ہیں۔

مطلقہ حکام کی بار بار یقین دہانیوں کے باوجود بلڈوزر علاقے میں نہیں بھیجے گئے ۔عوام الناس کا مطالبہ ہے کہ فوری ریلیف کے طور پر بلڈوزر اور سڑکیں صاف کرنے والی دوسری مشینری علاقے میں بھیجی جائیں تاکہ سیلابی پانی کا راستہ کھل سکے۔

وحدت نیوز (بلتستان) مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن کے زیراہتمام شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی اور ان کے رفیق کار علامہ آغا علی الموسوی کے برسی کی مناسبت سے ایک فکری نشست کا انعقاد ڈویژنل سیکرٹریٹ میں ہوا، جس میں علامہ آغا علی الموسوی کے فرزند ارجمند مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ گلگت بلتستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ آغا مظاہر حسین الموسوی، مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن کے سیکرٹری جنرل علامہ آغا علی رضوی کے علاوہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رکن شوری عالی حجتہ الاسلام علامہ شیخ محمد حسن صلاح الدین کی خصوصی شرکت تھی۔ جبکہ جامعتہ النجف اسکردو کے وائس پرنسپل علامہ شیخ احمد علی نوری اور علامہ ذیشان علی بھی شریک تھے۔ علمائے کرام نے فکری نشست سے خطاب کرتے ہوئے علامہ شہید عارف حسین الحسینی اور آغا علی الموسوی کی شخصیت کے بارے میں مفصل گفتگو کی۔

علمائے کرام نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان جیسے ملک میں عارف حسینی برسوں میں ہی پیدا ہونے والی شخصیت ہے، آپ نے اپنے رفیق کار آغا علی الموسوی کے ہمراہ پاکستان کے چپہ چپہ اور کونہ کونہ میں خط امام کی ترویج کی۔ اس میں کسی قسم کی مبالغہ آرائی نہیں کہ آپ پاکستان کے خمینی (رہ) تھے اور امام خمینی (رہ) کی ذات میں آپ اس طرح گم تھے جس طرح وہ اسلام میں۔ لہذا فکر خمینی کے پرچار میں آپ نے کسی قسم کا دقیقہ فروگذاشت نہیں کیا۔ اسوقت ہمارے اوپر یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ ہم فکر حسینی کا پرچار کریں۔ علمائے کرام نے اپنے خطاب میں کہا کہ عارف حسینی پاکستان میں استعمار و استبداد کے خلاف ایک عظیم تحریک کا نام ہے اور آپ نے اسلام محمدی اور اسلام امریکائی کو اہلیان پاکستان کے سامنے مشخص کرکے رکھ دیا۔ آپ نے استعمار اور استعماری طاقتوں کا وطن عزیز میں سدباب کیا، یہی وجہ ہے کہ دشمن نے فوری طور پر بھانپ لیا اور آپکو اپنے راستے سے ہٹا دیا۔ لیکن یہ دشمن کہ بھول ہے کہ بدن کی موت سے کردار کو قتل کرے، لیکن ایسا نہیں ہوتا۔

وحدت نیوز (لاہور) شہید قائدعلامہ عارف حسین الحسینی کے زکرنے آج پھر ہماری قوم کو سربلندی ا ور افتخارکے راستے پر گامزن کردیا ہے۔شہید کی یاد آج بھی ہمارے دلوں سے محونہیں ہوئی ہم آج بھی راہ شہید پر چل کر قافلہ حسینی میں شریک ہیں۔ ان خیا لات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری فلاح بہبود مسئول خیر العمل فاﺅنڈیشن پاکستان برادر نثار علی فیضی نے قومی مرکزشاہ جمال لاہور میں اپنے خطاب کے دوران کیا۔

تقریب میں پنچاب کی صوبائی کابینہ ، لاھور و دیگر قریبی اضلاع کے ضلعی سیکرٹری جنرلز و کابینہ ، لاہور کی اہم سیاسی ، مذہبی و سماجی شخصیات نے شرکت کی۔ نثار فیضی نے حالیہ بارشوں سے جنوبی پنجاب، بلوچستان اور کراچی میں متاثرین کی دگرگوں صورتحال کا زکرکرتے ہوئے تمام دردمند و مخیر حضرات سے بڑھ چڑھ کر امدادکی اپیل کی۔ خیر العمل فاﺅنڈیشن کے مسئول نے ادارہ کی گزشتہ 3سالہ انسانی خدمت کے سفر پر مفصل بریفنگ دی اور بتایا کہ خیر العمل فاﺅنڈیشن پاکستان نے نہایت مختصر عرصہ میں مجلس وحدت مسلمین پاکستان سے عوام کی وابستہ توقعات پر پورا اترنے کی بھر پور کوشش کی ہے ۔2010 سیلاب زدگان کی ریلیف و ریسکیو سے لیکر آج تک متاثرین کی خدمت اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ آج بھی تعمیر وطن پروگرام کے توسط سے 200گھروں کی رہائشی سکیمز ،34مساجد ، 3ڈسپنسریز,، 1ہسپتال ، 1ہایر سیکنڈری سکول اور562یتیم بچوں کی کفالت کے منصوبوں پر خدمت کا سفر جاری ساری ہے۔

 تقریب سے مرکزی سیکرٹری مالیات علامہ مبارک موسوی ، صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی ، مرکزی سیکرٹری تربیت علامہ احمد اقبال رضوی نے بھی خطاب کیا اور خیر العمل فاﺅنڈیشن کی خدمات کو سراہا،پروگرام کی نظامت خیر العمل فاﺅنڈیشن پنجاب کے مسﺅل سید مسرت کاظمی نے کی۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ) نے برادر نثار علی فیضی کی مرکزی کابینہ میں بحیثیت سیکریٹری فلاح و بہبود (انچارج خیر العمل فائونڈیشن پاکستان ) شمولیت کی توثیق کر دی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز اسلام آباد میں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ) کی زیر صدارت ہونے والے مرکزی کابینہ کے اجلاس میں برادر نثار علی فیضی کی کابینہ میں شمولیت کا اعلان کیا گیا۔ واضح رہے کہ نثار علی فیضی گذشتہ تین سال بھی اسی عہدے پر با حسن و خوبی اپنی ذمہ داریاں انجام دے چکے ہیں ، پاکستان کی تاریخ کا بد ترین سیلاب ہو یا اس کے بعد متاثرین کی بحالی کا کام نثار علی فیضی ہر لمحہ میدان عمل میں موجود رہے ہیں ۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین کے شعبہ ویلفیئر خیرالعمل فاوُنڈیشن کے زیراہتمام شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کی 25 ویں برسی پر ایک سیمینار قومی مرکز شاہ جمال لاہور میں منعقد ہوا، جس میں مجلس وحدت مسلمین پاکستان ضلع لاہور کے تمام یونٹوں کے اراکین اور لاہور بھر سے شہید قائد کے رفقا و عاشقان نے شرکت کی۔ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی رہنما علامہ سید مبارک علی موسوی نے کہا کہ پاکستان میں شیعہ سنی وحدت کا نعرہ شہید قائد نے اس وقت لگایا جب استعمار کا ایجنٹ ضیا الحق مذہبی منافرت پھیلا چکا تھا ، شہید قائد کی آواز پر لبیک کہتے ہوئے ہم آج بھی وحدت کا نعرہ لگا رہے ہیں اور اس راہ پر عملی طور پر عمل پیرا ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جاری دہشت گردی کے پیچھے عالمی استعمار کی سازش ہے جو امت مسلمہ کو تقسیم در تقسیم کرنا چاہتی ہے ، شہید قائد کے پیروکار پاکستان میں ایسا ہر گز نہیں ہونے دیں گے۔مجلس وحدت مسلمین ضلع لاہور کے سیکرٹری جنرل علامہ امتیاز کاظمی نے اپنے خطاب میں کہا کہ یہ شہید قائد کی آواز ہی ہے جس نے آج بھی ملت کو وحدت کی لڑی میں پرویا ہوا ہے ، ملت کے خادم بن کر علمائے حق اور جوانان شہید قائد کے مشن کو پورا کر کے رہیں گے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ خواتین کے مرکزی سیکرٹری علامہ ابوزر مہدوی نے کہا کہ حکومتِ وقت نے امریکہ کے سامنے اپنے گھٹنے ٹیکے ہوئے ہیں، حکمران اپنی عیاشی کی خاطر ملی غیرت کا سودا کر چکے ہیں، ہماری جد وجہد پاکستان تک محدود نہیں بلکہ دنیا بھر کے مستضعفین کے لئے ہے، عالمی استعمار شام میں ، لبنان میں ،ہر جگہ ذلیل و رسوا ہو کر رہے گا۔ تقریب سے علامہ عبدالخالق اسدی، سید اسد عباس نقوی، سید مسرت کاظمی، نثار فیضی، سید اقبال رضوی اور علامہ اصغر عسکری نے بھی خطاب کیا۔

 وحدت نیوز ( کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رہنماء علامہ ہاشم موسوی نے قوم سے اپیل کی ہے کہ وہ خانوادہ شہدا اور سیلاب متاثرین کو عید کے موقع پر فراموش نہ کریں اور ان سے اظہار یکجہتی کیلئے عید سادگی سے منائیں۔انہوں نے کہا ہے کہ پورے ملک بالخصوص بلوچستان مختلف آفات اور مشکلات کی ذد میں ہے لہذاً عوام کو دانشمندی ،صبر ،جرات اور سادگی کا مظاہر ہ کرنے کی ضرورت ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ملت تشیع بالخصوص مشکلات کے ذد میں ہے کیونکہ ایک طرف سے وہ بزدل اور پیسہ پرست تکفیری دہشتگردوں سے نبردآزمائیں جو چھپ کر وار کرتے ہیں اور دوسری طرف سے وہ اپنے اندر چھپے ہوئے نسل پرست اور فاشسٹ دشمنوں سے نمٹ رہے ہیں جو منافقت کے لبادے میں دوست بنکر در اصل دشمنوں کے ایجنٹ ہیں۔انہوں نے عید کے دن حکومت سے سیکورٹی سخت کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے عوام سے بیدار رہنے کی اپیل کی ہے ۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree